Jugnoon Se Bhar Doon Aanchal Complete Novel By Hina Asad

 

Novel : Jugnoon Se Bhar Doon Aanchal Complete Novel Pdf
Writer Name : Hina Asad

Mania team has started  a journey for all social media writers to publish their Novels and short stories. Welcome To All The Writers, Test your writing abilities.
They write romantic novels, forced marriage, hero police officer based Urdu novel, suspense novels, best romantic novels in Urdu , romantic Urdu novels , romantic novels in Urdu pdf , full romantic Urdu novels , Urdu , romantic stories , Urdu novel online , best romantic novels in Urdu , romantic Urdu novels
romantic novels in Urdu pdf, Khoon bha based , revenge based , rude hero , kidnapping based , second marriage based,
Jugnoon Se Bhar Doon Aanchal Complete Novel Pdf  Novel Complete by 
Hina Asad Khan is available here to download in pdf form and online reading.
 

وہ ابھی بھی رات والے ریڈ فراک میں ملبوس تھی،دائیں شانے پر
دوپٹہ بےنیازی سے جھول رہا تھا، وہ دونوں ہاتھوں سے اس کے دونوں شانے جکڑتا ہوا
پھنکارا ۔۔۔ وہ اس کہ یکدم بدلتے تیور دیکھ کر ٹھٹھکی ۔۔۔۔
دیکھو اگر تم نے مجھے ہاتھ بھی لگایا “وہ اسے انگلی اٹھا
کر اسے وارننگ دینے لگی ۔۔۔ اس سے پہلے کہ وہ کچھ کہتی ۔۔۔ شہریار نے اس کے بائیں
شانے سے فراک کھسکاتے ہوئے اس پر اپنے دانت گاڑے ۔۔۔۔
آہ ۔۔۔۔آ۔۔۔آ۔۔۔۔اس کہ منہ سے درد بھری چیخ نکلی ۔۔۔۔ چھوڑو مجھے جنگلی وحشی انسان ،وہ اپنا آپ چھڑوا کر دو قدم
پیچھے ہٹی ۔۔۔ اپنے برہنہ شانے پر فراک دوبارہ برابر کیا ۔۔۔۔
تم ایک نہایت ہی گھٹیا ۔۔۔ شہریار نے اسے پھر سے
“تم” کی گردان کرتے ہوئے دیکھا تو جارہانہ تیوروں سے اس کی کلائی کھینچ
کر دوبارہ قریب کیا ۔۔۔اور گردن پر دانت گاڑے ۔۔۔ وہ دونوں ہاتھوں کے ناخنوں سے اس
پر حملہ آور ہونے لگی تھی کہ ،شہریار نے باکمال مہارت سے اسے ایسا کرنے سے روکتے
ہوئے اس کے دونوں ہاتھ قابو کیے ،،،
شیر کے آگے جنگلی بلی کی نہیں چلتی “وہ کڑک آواز میں
بولا۔ ابھی شانے کی جلن ہی کم نہیں ہوئی کہ گردن بھی دُکھنے لگی ۔۔۔۔
ہاں اب بولو “تم
وہ گھمبیر آواز میں بولا وہ نم آنکھوں سے اسے
دیکھنے لگی ۔مگر اس بار زبان چلانے کی کوشش نہیں کی ۔
دس منٹ میں ٹیبل پر میرا ناشتہ موجود ہو “ورنہ ۔۔۔۔ ورنہ کیا ہاں ؟؟؟ اگر میں نا جاؤں تو؟؟۔۔ رسی جل گئی مگر بل نا گیا
وہ استہزایہ انداذ سے ہنسا ۔۔۔ واقعی کچھ لوگ بالکل ڈھیٹ ہوتے ہیں۔اور تم اس مثال پر پوری
اترتی ہو
” “اگر مزید اپنے نئے نویلے شوہر کی فضول حرکتیں نہیں دیکھنا
چاہتی تو جو کہا ہے فورا کرو ،
پھوٹو منہ سے کیا کھانا ہے ؟؟؟وہ پھر بدتمیزی سے باز نہ آئی۔ وہ
اسے دیکھ تاسف سے سر ہلانے لگا۔۔۔
جاؤ آج تمہارا پہلا دن ہے اس گھر میں اسی لیے اتنی چھوٹ دے
رہا ہوں ،جو مرضی بنا لو ناشتے میں۔کل سے یہ رعایت بھی نہیں ملے گی ۔وہ کہتے ہوئے
اپنے شوز پہننے لگا ۔۔۔
“”مجھے کچھ بھی بنانا نہیں آتا ۔گھر میں تو میں خود اٹھ کر
پانی بھی نہیں پیتی تھی
” “واہ بہت اچھی خوبیاں ہیں “!!وہ تاسف زدہ آواز میں بولا۔ جلدی جاؤ مجھے آفس کے لیے نکلنا ہے
تمہارے گھر والوں کی طرح مِلز نہیں چل رہی جو
دو دن نا جاؤں تو سب میسر ہو جائے ،غریب سا بندہ ہوں محنت کروں گا تو پیسے کماؤں
گا
وہ اسے دیکھ کم گھور زیادہ رہی تھی ۔ روٹی کھانی ہے نا، تو کمانا بھی پڑتا ہے ،پھر ہی ملے گی

Click on the link given below to Free download 638 pages Pdf
It’s Free Download Link

Media Fire Download Link

Click Now 


$ads={1}

Google Drive Download Link

Download

$ads={2}

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *