Jaan E jaana Novel by Asra Khan

Novel : Jaan E jaana
Writer Name : Asra Khan
Mania team has started  a journey for all social media writers to publish their Novels and short stories. Welcome To All The Writers, Test your writing abilities.
They write romantic novels, forced marriage, hero police officer based Urdu novel, suspense novels, best romantic novels in Urdu , romantic Urdu novels , romantic novels in Urdu pdf , full romantic Urdu novels , Urdu , romantic stories , Urdu novel online , best romantic novels in Urdu , romantic Urdu novels
romantic novels in Urdu pdf, Khoon bha based , revenge based , rude hero , kidnapping basad , second marriage based,
Jaan E jaana Novel Complete by Asra Khan is available here to download in pdf form and online reading.

 

جان جاناں”۔۔۔۔۔۔۔ سرسراتی ہوئی آواز اسکے کانوں سے
ٹکرائ۔۔۔۔۔ اسکا دل جیسے دھڑکنا بھول گیا تھا ۔۔۔۔ پیروں تلے زمین کھسک گئی
تھی۔۔۔۔ اللّه کو یاد کرتے ہوئے اس نے یہ دعا مانگی کہ یہ جھوٹ ہو۔۔۔۔ اسکا وہم
ہو۔۔۔۔یا کچھ اور۔۔۔۔۔
! مگر سچ نا ہو۔۔۔۔ آہستہ سے وہ پلٹی۔۔۔۔ سامنے صوفے پر وہ نیم
دراز سا ٹیبل پر ٹانگیں پر رکھے ہنس رہا تھا۔۔۔۔ خوف سے اسکا رنگ سفید پڑ
گیا۔۔۔۔سانس تک لینا اسے بھول گیا تھا ۔۔۔۔

جان جاناں۔۔۔۔۔
وہ پھر سے گنگنایا۔۔۔ جاناں نے ایک نظر اسے
دیکھا۔۔۔۔ اور پھرتی سے واپس باہر کی طرف بھاگنے کے لئے پلٹی۔۔۔۔ اسکی حرکت پر وہ
بے ساختہ ہنس پڑا۔۔۔۔ یہ کیا۔۔۔۔۔؟؟ دروازہ باہر سے بند ہو چکا تھا۔۔۔۔۔ پتھر بن
جانے کے خوف سے وہ مڑی نہیں۔۔۔۔ جان جاناں ۔۔۔۔؟ سسر جی اور ساسو ماں نہیں آئیں گے
کیا۔۔۔۔۔؟ نکاح میں شرکت کے لئے۔۔۔۔۔؟ وہ اطمینان سے مسکراتا اس سے سوال کر رہا
تھا۔۔۔۔ جاناں کی سانس کہیں اٹک گئی۔۔۔۔ یہ وہ کیا کہ رہا تھا۔۔۔۔ بے بسی کے احساس
سے اسکی آنکھیں بھر آئیں تھی۔۔۔۔ پپ۔۔۔پلیز مجھے جانے دو۔۔۔۔ خوف کی شدّت سے وہ
بری طرف کانپ رہی تھی۔۔۔۔
بھلے کہیں بھی جاؤ۔۔۔۔تمہاری ہر راہ مجھ پر ہی تو آ کر رکتی
ہے ۔۔۔
پلیز سمجھنے کی کوشش کرو۔۔۔ میں عامر سے محبّت کرتی ہوں۔۔۔۔ وہ
تھوک نگلتے ہوئے بولی۔۔۔ ششش۔۔۔۔۔۔۔
! وہ اچانک اسکے قریب آ کر سختی سے اپنے لبوں پر انگلی رکھتا
اسے خاموش کروانے لگا۔۔۔۔ وہ ڈر کر بے اختیار دو قدم پیچھے ہوئ۔۔۔ جان کی آنکھوں
میں اسے واضح سرخ لکیریں اترتی محسوس ہوئیں تھی۔۔۔۔ جاناں نے چور سی نگاہ اردگرد
دوڑائ۔۔۔۔ سامنے بیڈ روم کھلا ہوا تھا۔۔۔۔ اسے دیکھنے کے ساتھ ساتھ اس نے ایک نگاہ
جان کے چہرے پر دوڑائ۔۔۔۔ جو ذرا سنجیدگی سے اسے دیکھ رہا تھا۔۔۔۔

Click on the link given below to Free download Pdf
It’s Free Download Link

Media Fire Download Link

Click Now 


$ads={1}

ONLINE READING

$ads={2}

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *