Tou Kitni Masoom Hai By Aymen Nauman

Novel : Tou Kitni Masoom Hai
Writer Name : Aymen Nauman
Mania team has started  a journey for all social media writers to publish their Novels and short stories. Welcome To All The Writers, Test your writing abilities.
They write romantic novels, forced marriage, hero police officer based Urdu novel, suspense novels, best romantic novels in Urdu , romantic Urdu novels , romantic novels in Urdu pdf , full romantic Urdu novels , Urdu , romantic stories , Urdu novel online , best romantic novels in Urdu , romantic Urdu novels
romantic novels in Urdu pdf, Khoon bha based , revenge based , rude hero , kidnapping basad , second marriage based,
Tou Kitni Masoom Hai Novel Complete by Aymen Nauman is available here to download in pdf form and online reading.

 

میرے پیارے ‘hubby’ اب تم اپنی جیب خالی کرنے کے لئے تیار ہو جاؤ شلوار قمیض میں
نہیں پہنتی”۔۔۔
تم نے میری اتنی پیاری پیاری ٹی شرٹس کاٹ دیں” ۔۔۔ حجاب
کو رہ رہ کر افسوس ہو رہا تھا ۔۔۔۔
ہیلو میرے پیارے ہٹلر “۔۔ حجاب بشر کے سامنے کھڑی بہت
دلکش انداز اورایک ادا کھڑی صبح کا سلام پیش کر رہی تھی۔۔۔۔ بلکل کوئ فلم کی
ہیروئن کی طرح ۔۔۔ بشر نے جواب دینے کے لئے جیسے اس کو دیکھا ۔۔۔ بشر کا منہ کھلا
کا کھلا رہ گیا ایساب میں ایکدم اشتعال سا بھر گیا۔۔۔

یہ کیا پہن کر نکلی ہو ؟؟؟؟”۔۔۔ بشر کا
دماغ بھک سے اڑ گیا اس کو نائٹی میں باہر دیکھ کر ۔۔۔۔۔
کیوں کیا ہوا؟؟؟؟”۔۔۔۔ حجاب نے شرارتی لہجے میں آنکھیں
پٹ پٹا پٹا کر معصومیت سے کہا ۔۔۔۔ ملازمہ جو ابھی ابھی ڈرائنگ روم ناشتہ لے کر
داخل ہوئی تھی حجاب کو دیکھ کر پوری بتیسی کی نمائش اس نے مفت میں کر ڈالی ۔ ۔۔۔ بشر
شرمندگی اور غصے کی اتھاہ گہرائیوں میں تھا۔۔۔۔

تم جاؤ یہاں سے اور اپنی یہ بتیسی اندر کرو
“۔۔۔۔ وہ ملازمہ پہ دھارا۔۔۔ ملازمہ اپنی ہنسی بامشکل ضبط کرتی وہاں سے کھسک
گئی ۔۔۔۔ بشر اپنی کرسی سے اٹھا اور حجاب کا ہاتھ سختی سے پکڑ کےکمرے میں کھینچتا
ہوا لے کر آیا۔۔۔۔
تم یہ کیا بیہودہ لباس پہن کر باہر آئی ہو” ۔۔۔ کونسا بیہودہ لباس ؟؟؟ میں نے تو نائٹ ڈریس پہنا ہے “۔۔۔ حجاب نیں معصومیت کے
تمام ریکارڈ توڑ ڈالے۔ ۔۔۔
میں بتاؤں کیا ہے اس میں؟ ؟؟؟؟”۔۔ بشر طیش کے عالم میں
حجاب کی طرف بڑھا۔۔۔۔ وہ آج شدید زچ ہو چکا تھا۔۔۔ حجاب اس کے تاثرات دیکھ کر الٹے
قدموں پیچھے دیوار سے جا لگی ۔۔۔۔ حجاب کی آنکھیں خوف سے پھیل گئیں۔ ۔۔ بشر نے اس
کی کلائی پکڑ کر اسکا منہ دیوار کی طرف کیا اور اپنی تھوڑی اس کے کندھے پر رکھ کر کلائی
سختی سے مروڑی ۔۔۔ کلائی بشر کے ہاتھوں حجاب کی کمر پر سختی سے مڑی ہوئ تھی ۔۔۔
پلیز چھوڑیں مجھے ۔۔۔ درد سے اس کی آنکھوں میں نمی بھر گئی
۔۔۔
اس لباس میں تمہیں دیکھنے کا حق صرف اور صرف میراہے “۔۔۔
میرے علاوہ چاہے کوئی بھی ہو میں یہ برداشت نہیں کر سکتا کہ
اس کی نظر تمہارے جسم کےنشیب و فراز پر پڑے”۔۔ ۔۔۔ میں نےتمہیں اگر ڈھیل دی ہوئی
ہے۔۔ اس کا ہر گز بھی یہ مطلب نہیں ہے کہ تم اپنی من مانی کر”۔۔ وہ آج پہلی
دفعہ اس سے خائف ہوئی تھی۔۔۔ وہ تو سمجھ رہی تھی کہ وہ اپنی غلطی پر پچھتائے گا
مگر یہ کیا ۔۔۔ بشر اس کی نمی سے بھری آنکھوں کو دیکھ کر ایک جھٹکے سے اسے چھوڑ کے
کمرے سے نکل گیا ۔۔۔۔

$ads={2}
Click on the link given below to Free download Pdf
It’s Free Download Link

Media Fire Download Link

Click Now 


$ads={1}

ONLINE READING

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *