Kiya Hoi Hai Khata By Rimsha Hussain

 

 Novel : Kiya Hoi Hai Khata Complete Novel
Writer Name :  Rimsha Hussain
Category : 
Triangle love story base Suspenseful novel

Rimsha Hussain is the author of the book Kiya Hoi Hai Khata Pdf. It is an excellent Triangle love story base Suspenseful novels,
Mania team has started  a journey for all social media writers to publish their Novels and short stories. Welcome To All The Writers, Test your writing abilities.

They write romantic novels, forced marriage, hero police officer based Urdu novel, suspense novels, best romantic novels in Urdu , romantic Urdu novels , romantic novels in Urdu pdf , Bold romantic Urdu novels , Urdu , romantic stories , Urdu novel online , best romantic novels in Urdu , romantic Urdu novels romantic novels in Urdu pdf, Khoon bha based , revenge based , rude hero , kidnapping based , second marriage based, social romantic Urdu, Kiya Hoi Hai Khata Novel Complete by Rimsha Hussain is available here to 

کسی
لڑکی کے کمرے میں آنے کا یہ کیا طریقہ ہے؟اُس کے لہجے میں کاٹ تھی جبکہ سامنے والا
تو اُس کی بات پر مزید غُصے میں آگیا تھا

کیا
ہے یہ؟اُس نے اپنے ہاتھ میں موجود رپورٹس اُس کی طرف پھینکی جو اُس کے پاؤں کے پاس
گِری

تم
لائے ہو تو چیک نہیں کیا تھا کیا؟بنا رپورٹس پر ایک نظر ڈالے وہ طنز لہجے میں اُس
سے گویا ہوئی تو وہ اپنے ہاتھوں کی مٹھیوں کو زور سے آپس میں بند کیے یہاں سے وہاں
ٹلہتا اپنا غُصہ کم کرنے کی ناکام کوشش کرنے لگا پر جب کچھ ہاتھ نہ آیا تو ایک ہی
جست میں اُس تک پہنچ کر بازو سے پکڑ کر اپنے روبرو کیا تھا

چھوڑو
مجھے تمہاری ہمت کیسے ہوئی ہے مجھے چھونے کی۔۔وہ خونخوار نظروں سے اُس کو دیکھ کر
بولی

شٹ
اپ بیوی ہو تم میری اور مجھے تم بتاؤ تمہاری ہمت کیسے ہوئی جو تم نے میرے بچے کی
جان لی؟کس کی اِجازت سے تم نے اپنا ابارشن کروایا۔۔وہ بولا نہیں بلکہ دھاڑا تھا جس
پہ سامنے والے کی روح فنا ہوئی تھی وہ فق ہوتی رنگت سمیت اُس کا جلالی روپ دیکھنے
لگی جس کی آنکھیں آگ اُگلنے کے قریب تھی پہلے جہاں ہر وقت اُس کی محبت کے دیپ جلا
کرتے تھے وہاں عجیب اجنبیت تھی”وہ تو اُس کے نام کی تسبیح پڑھا کرتا تھا پھر
کیسے اچانک سے اِتنا بدل گیا تھا وہ؟اُس کی آنکھیں نم ہونے لگی تھی

ڈونٹ
کرائے۔”آج میں تمہاری آنکھوں میں آنسو دیکھ کر پگھلنے والا نہیں مجھے میرے
سوال کا جواب چاہیے تو بس چاہیے تمہیں اندازہ نہیں اپنی اِس حرکت کی وجہ سے تم نے
مجھے خود سے خود دور کیا ہے۔۔۔وہ کسی اچھوتے کی طرح اُس کو دور کرتا بولا تو بس
اُس کو دیکھتی رہ گئ پھر جلدی خود کو کمپوز کرتی احساس سے عاری لہجے میں بولی

تم
میرے شوہر نہیں ہو اور نہ میں تمہاری بیوی جلدی تمہیں خلع کے کاغذات مل جائے گا
پھر ہمارا یہ کاغذی رشتہ ختم ہوجائے گا،اِس لحاظ سے تمہارا کوئی حق نہیں بنتا کہ
تم کوئی مجھ سے سوال جواب طلب کرو۔۔۔۔

میں
تمہاری جان لے لوں گا۔۔۔اُس کی بات پہ وہ اپنے تڑپتے دل کی پُکار کو رد کرتا گلا
دبوچ کر سچ مچ میں اُس کی جان لینے کے در پہ تھا

جان
تو کب کا لے چُکے ہو تم۔۔۔وہ اُس کا خود دور کرتی زخمی مسکراہٹ سے بولی تو کچھ پل
کے لیے وہ بول نہیں پایا

  • Download in pdf form and online reading.
  • Click on the link given below to Free download 484 Pages Pdf
  • It’s Free Download Link

Media Fire Download Link

Click Now 


$ads={1}
Download From Google Drive

$ads={2}

ناول پڑھنے کے بعد ویب کومنٹس باکس میں اپنا تبصرہ پوسٹ کریں اور بتائیے آپ کو ناول کیسا لگا ۔ شکریہ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *