Dil Yeh mera Novel By Rimsha Hussain

 

 Novel : Dil Yeh mera Complete Novel
Writer Name :  Rimsha Hussain
Category :  Friendship  Based Novel

Rimsha Hussain is the author of the book Dil Yeh mera Pdf. It is an excellent social,Friendship Based, Romantic love story based novels,

Mania team has started  a journey for all social media writers to publish their Novels and short stories. Welcome To All The Writers, Test your writing abilities.
They write romantic novels, forced marriage, hero police officer based Urdu novel, suspense novels, best romantic novels in Urdu , romantic Urdu novels , romantic novels in Urdu pdf , Bold romantic Urdu novels , Urdu , romantic stories , Urdu novel online , best romantic novels in Urdu , romantic Urdu novels
romantic novels in Urdu pdf, Khoon bha based , revenge based , rude hero , kidnapping based , second marriage based, social romantic Urdu,
Dil Yeh mera Novel Complete by 
 Rimsha Hussain is available here to 

کون ہوتم؟عمیر اپنے نانو کے گھر کہ دروازے پہ
انجان لڑکی دیکه کر تعجب سے پوچها وہ م وہ م۔دعا اٹک اٹک کر کجھ بولنا چاہا پر بول
نہ پا
ٸی۔ بولنے کی صلاحيت سے محروم ہوکیا؟عمیر نے
دوسرا سوال بھی کرڈالا۔ ن نہی۔دعا نے جلدی سے اپنا سر نفعی میں ہلایا۔ کون ہے
دروازے پہ ۔بانو بیگم خود اسٹک کہ سہارے چلتی ان تک آ
ٸی
دعا بانو بیگم کو دیکهتی جلدی سے ڈور کر اندر کی طرف چلی گ
ٸ۔
عمیر کیسے ہںو میرے بیٹے۔بانو بیگم خوشی سے نہال ہںوتیں اس کی جانب آ
ٸی۔
میں ٹھیک نانو آپ سناۓ۔عمیر ان کو اپنے ساته لگاۓ پوچهنے لگا اور اندر کی طرف آیا۔
اللہ کا شکر ہے۔بانو بیگم نے جواب دیا لڑکی کون تھی؟نانو پہلے تو کبهی میں نے آپ
کے گھر شکیلا کہ علاوہ نہیں دیکها۔عمیر کجھ دیر بعد دعا بارے میں پوچهنے لگا تو
بنا جھجھک کر اس کو ساری بات بتادی۔ آپ ایسے کسی کو کیسے اپنے گھر میں پناہ دے
سکتی ہيں؟عمیر ناراضگی سے بولا۔ ایسے ہی نہیں رکھا اس کی بات میں سچائی محسوس ہںو
ٸی
تو رکھا ورنہ وہ بیچاری اس ظالم دنیا میں کہاں جاتی اور ہے بھی تو جوان لڑکی نہ۔بانو
بیگم آرام سے اس کو سمجھایا۔ اور خوبصورت بھی۔عمیر نے منہ سے پھسلا۔ عمیر۔بانو
بیگم نے گھورا کیا ہے نانو میں نے ایسے ہی بات کی۔عمیر نے وضاحت دی۔تبھی دعا وہاں
چاۓ کی ٹرے لے آ
ٸی۔پہلے بانو بیگم کو دی پھر ڈر ڈر کر عمیر کی طرف
بڑھا
ٸی پر اس کو دیکهنے کی غلطی نہیں کی عمیر بھی ناں
اس پہ دھیان دی
ٸے چاۓ پکڑ لی ڈر تھا کہ کہیں چاۓ اس کے اُپر ہی
گِرا دیتی۔ دعا تم بھی بیٹھو نہ ہمارے ساته۔اس کو اندر جاتے دیکه کر بانو بیگم نے
کہا۔ جی نانو بس کچن صاف کرلو۔دعا بہانا بناتی چلی گ
ٸ۔جب
کی بانو گہری سانس لے کر رہ گ
ٸ اس کو خوفزدہ
دیکه کر الحمداللہ میں شکل بہت خوبصورت ہے۔عمیر چاۓ پیتے بولا۔ تو؟نانو کو اس کی
بات سمجھ نہ آ
ٸی۔ تو یہ آپ کی نٸ
نواسی مجھ دیکه کر اتنا خوفزدہ ہںو
ٸی جتنا کوٸی
ہارر موویز میں بھوت کو دیکه کر نہیں ہوتا۔عمیر منہ بنا کر بولا۔ ہاہا۔ایسا نہیں
ہے بس پہلی دفعہ ملی ہے نہ اس لیے۔بانو بیگم نے ہنس کر بولی۔ اچها خیر یہ بتائيں
آپ کہ چاۓ کیوں نہیں پی رہی؟ عمیر اپنا چاۓکا کپ خالی کرتا بولا بس پانچ منٹ بعد
آزان ہونے والی ہے اور میرا وضو ہے اس لیے اور میں نے چاۓ پینا کم کی ہے۔بانو بیگم
نے جواب دیا۔ اچها پھر اپنا کپ مجھے دے میں پی لیتا ہوں۔عمیر کہتے ہی ان کی سا
ٸيڈ
پہ رکھا کپ اٹها لیا۔ تم کب سے چاۓ کے اتنے شوقین ہوگ
ٸے
ہو؟بانو بیگم تعجب سے بولی۔ آج سے۔عمیر چاۓ کا گھونٹ بھر مزے سے بولا۔ ہاں دعا کے
ہاتهوں میں جادو ہے کجھ بنا بہت مزیدار بناتی ہے۔بانو بیگم دعا کی تعریف کرتے
بولی۔ان کی بات پہ چاۓ پیتے عمیر کو زبردست کھانسی کا دورہ پڑا۔ عمیر آہستہ کیا
ہوا ہے؟بانو بیگم اس کے لال ہوتے چہرے کو دیکه کر فکرمندی سے بولی۔ نہیں کجھ نہیں
نانو آپ جاۓ آذان ہورہی ہے۔عمیر خود کو سنبهالتا بولا۔ ہاں جاتی ہوں تم تو یہی ہو
نہ ابھی۔بانو بیگم نے اٹه کر پھر پوچها جی اتنے ٹائم بعد آیا ہوں ابھی تو یہی
ہوں۔عمیر کپ ٹيبل پہ رکھتا بولا۔ صحيح میں نماز ادا کرلوں۔بانو بیگم کہتی لا
ٸونج
سے نکل گ
ٸ۔عمیر بھی اپنی موبائل ميں گم ہوگیا۔دعا بھی کچن
سے نکلی تو لا
ٸونج میں آکر ٹيبل سے کپ اٹهانے لگی۔ چاۓ بنانے
وقت آپ کا خیال کہاں تھا؟عمیر موبائل میں اپنی نظر ٹکاتا اس سے سوال کیا پر دعا
ناسمجھی سے اس کی طرف دیکهنے لگی۔جواب نہ ملنے عمیر نے اس کی طرف دیکها جو اس کو
دیکه رہی تھی۔ چاۓ آپ نے خود پی تھی یہاں ایسے ہی بس ہمارے لیے کی۔عمیر نے ایک اور
سوال کیا۔ م م میں آ آپ ک ک کی با ب بات کا م م مطلب ن ن نہی نہیں س س م سمجھی۔دعا
نے اٹک اٹک کر بامشکل اپنی بات کی۔اس کے ایسے بات کرتا دیکه کر عمیر کے چہرے پہ
مسکراہٹ آ
ٸی پھر کہا۔ 

Download in pdf form and online reading.
Click on the link given below to Free download 71 Pages Pdf
It’s Free Download Link


Media Fire Download Link

Click Now 


$ads={1}
Online Reading

$ads={2}


ناول پڑھنے کے بعد ویب کومنٹس باکس میں اپنا تبصرہ پوسٹ کریں اور بتائیے آپ کو ناول کیسا لگا ۔ شکریہ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *